Friday - 2018 Nov 16
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 73932
Published : 1/5/2015 11:55

شام نے مزاحمت کی تاریخ رقم کر دی

ایران کی مجلس شورائے اسلامی کے اسپیکر نے کہا ہے کہ صیہونی حکومت کے خلاف مزاحمت کی فرنٹ لائن پر شام کی موجودگی بناء پر اس ملک کو حملے کا نشانہ بنایا گیا ہے۔ پریس ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق مجلس شورائے اسلامی کے اسپیکر ڈاکٹر علی لاریجانی نے تہران میں شام کے وزیر دفاع فہد جاسم الفریج کے ساتھ ملاقات میں علاقائی مسائل اور شام کی تبدیلیوں کے بارے میں کہا کہ شام کے عوام اور حکام نے گذشتہ چار برسوں کے دوران، ملکی اور غیر ملکی دہشت گردوں کے خلاف جنگ کرتے ہوئے، مزاحمت کی تاریخ رقم کی ہے۔ ایران کی مجلس شورائے اسلامی کے اسپیکر نے کہا کہ دہشت گردوں کی تباہ کن کاروائیوں کا سلسلہ، صرف چند ملکوں تک ہی محدود نہیں ہے اور اگر علاقے کے مختلف ملکوں کی جانب سے، اس کے خلاف ٹھوس قدم نہیں اٹھایا گیا تو پھر پورے علاقے کی سلامتی کو خطرہ لاحق ہوجائے گا۔ ڈاکٹر علی لاریجانی نے تہران اور دمشق کے تعلقات کو تعمیری، دوستانہ اور برادرانہ قراردیا- انہوں نے کہا کہ عوام کے باہمی تعلقات اور مشترکات نے دونوں ملکوں کو ایک دوسرے سے قریب کردیا ہے۔ شام کے وزیر دفاع نے بھی شام میں دہشت گردوں کے خلاف جاری کاروائیوں اور تازہ ترین صورتحال سے متعلق ایک رپورٹ پیش کی اور کہا کہ ایران ہمیشہ سخت و دشوار حالات میں شام کے عوام کے ساتھ رہا ہے اور شام کے عوام اور حکومت، اس انسانی اور اخلاقی فریضے کو محسوس کرتے ہوئے، ایران کے عوام اور حکومت کی شکر گذار ہے۔ واضح رہے کہ شام میں دہشت گردانہ کاروائیاں، امریکہ اور صہیونی حکومت اور بعض علاقائی ملکوں کی حمایت سے جاری ہیں اور ہم اس بات کا مشاہدہ کررہے ہیں کہ شام میں زخمی ہونے والے داعش اور النصرۃ کے دہشت گردوں کا علاج، صیہونی حکومت کے اسپتالوں میں کیا جارہا ہے۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Friday - 2018 Nov 16