Monday - 2018 August 20
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 76870
Published : 11/6/2015 21:18

پاک افغان انٹیلیجنس سجمھوتے کی تردید

افغانستان کے صدر نے پاکستان کے ساتھ سیکورٹی اور انٹیلیجنس سمجھوتے پر دستخط کی خبر کی تردید کی ہے- موصولہ رپورٹ کے مطابق افغانستان کےصدر محمد اشرف غنی نے جنوبی افغانستان کے صوبے قندھار کے عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے اس خبر کو افواہ قراردیا اور کہا کہ اس سمجھوتے پر ابھی تک دستخط نہیں ہوئے ہیں- انہوں نے کہا اگر کابل اس طرح کے سمجھوتے پر دستخط کرنا چاہے تو اس کا متن اس حکومت کے حکام تیار کریں گے اور پھر اس کی تائید کے لئے اسے افغانستان کی قومی سلامتی کونسل میں بھیجا جائے گا- صدر افغانستان نے کہا کہ اسلام آباد نے پہلے سے کابل کے خلاف غیر اعلانیہ جنگ  شروع کر رکھی ہے اور اس وقت طالبان کے بجائے امن مذاکرات پاکستانی حکام کے ساتھ انجام پانے چاہیئں تاکہ پاکستانی حکام اس گروہ کو حکومت کابل کے ساتھ ون ٹو ون مذاکرات کے آغاز کے لئے راضی کرسکیں- اشرف غنی نے افغانستان کے سابق صدر حامد کرزئی کے دور صدارت میں طالبان گروہ کے ساتھ مذاکرات کے لئے انجام پانے والی کوششوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اس زمانے میں طالبان کے تمام کمانڈرز جو حکومت افغانستان کے ساتھ مذاکرات کر رہے تھے وہ یا تو پاکستان کے توسط سے ہلاک کردیئے گئے یا جیل میں قید ہیں- واضح رہے کہ گذشتہ ہفتوں کے دوران، افغانستان کی قومی سلامتی کے ادارے اور پاکستان کی آئی ایس آئی کے درمیان تعاون کے سمجھوتے پر دستخط کے بارے میں رپورٹیں شائع ہونے کے بعد یہ مسئلہ افغانستان میں ایک متنازعہ مسئلے میں تبدیل ہوگیا ہے-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 August 20