Tuesday - 2018 Oct. 23
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 77357
Published : 21/6/2015 20:4

یمن میں جنگ بندی مفرورصدرکی واپسی سے مشروط

جنیوا مذاکرات میں شریک سعودی حکومت کے وفد نے، یمن میں جنگ بندی کو،مستعفی اور مفرور صدر کو قانونی حیثیت سے تسلیم کرنے سے مشروط کیا ہے- تسنیم نیوز ایجنسی نے سفارتی ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ جنیوا میں یمن سے متعلق امن مذاکرات میں شریک سعودی وفد نے، یمن کے مستعفی اور مفرور صدرکو قانونی حیثیت سے تسلیم کرنے کو جنگ بندی کی شرط قرار دیا ہے- اسی سلسلے میں جنیوا میں یمن کے داخلی گروہوں کے وفد کے رکن عادل شجاع نے اقوام متحدہ کی اس تجویز کی مخالفت کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ عالمی ادارہ یمن پر سعودی اتحاد کے وحشیانہ حملوں کو قانونی حیثیت دینا چاہتا ہے- عادل شجاع نے جرمنی اور یورپی یونین کے سفیروں کے دھمکی آمیز پیغامات کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ یمن جانے والے وفد کے ساتھ جو رویہ اپنایا گیا وہ غیر قانونی تھا کیونکہ اسے اقوام متحدہ کے ہیڈکوارٹر میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دی گئی- تحریک انصاراللہ کے سینیئر رکن قاسم الخطیب نے بھی ہفتے کے روز کہا کہ جنیوا مذاکرات میں اقوام متحدہ نے ثابت کردیا کہ وہ خودمختار اور آزاد ادارہ نہیں ہے بلکہ اس کے فیصلے امریکہ کرتا ہے- قاسم الخطیب نے کہا کہ ایسے وقت میں جب سعودی اتحاد نے یمن میں قتل و غارتگری کا بازار گرم کر رکھا ہے، ہم اقوام متحدہ اور عالمی اداروں کی خاموشی کا مشاہدہ کر رہے ہیں-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 Oct. 23