Wed - 2018 Sep 26
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 77531
Published : 25/6/2015 21:40

ایٹمی مذکرات کی مدت میں توسیع کی حمایت

حکومت ایران کے ترجمان نے کہا ہے کہ اگر ضروری ہوا تو تہران ایٹمی مذاکرات کی مدت میں توسیع کے لئے تیار ہے۔ حکومت ایران کے ترجمان محمد باقر نوبخت نے ارنا کے ساتھ گفتگو میں وائٹ ہاؤس کے موقف کا ذکر کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر کوئی ابہام باقی رہ جاتا ہے کہ جس کے لئے مذاکرات کی مدت میں توسیع کی ضرورت پیش آتی ہے تو یقینا ہم اس مدت میں توسیع کی موافقت کریں گے- واضح رہے کہ وائٹ ہاؤس نے کہا ہے کہ ضرورت پڑنے پر ایٹمی مذاکرات کی مدت میں توسیع کا امکان موجود ہے- ایرانی حکومت کے ترجمان نے کہا کہ ہم امید کرتے ہیں کہ تیس جون تک مذاکرات ختم اور ہم مطلوبہ نتائج تک پہنچ جائیں گے- اس سے پہلے وائٹ ہاؤس کے ترجمان جاش ارنسٹ نے پیر کے روز اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف کے اس بیان کی موافقت کی تھی کہ ایک اچھے ایٹمی سمجھوتے کے حصول کی اہمیت، مقررہ مدّت سے کہیں زیادہ اہم ہے- جاش ارنسٹ نے کہا تھا کہ امریکہ کو معینہ مدت میں ہی سمجھوتے کے حصول کی امید ہے لیکن ضرورت پڑنے پر مختصر مدت کے لئے اس میں توسیع کا امکان پایا جاتا ہے- جاش ارنسٹ نے کہا کہ امریکی صدر بھی اس سلسلے میں ایرانی وزیر خارجہ کے ہم خیال ہیں- خیال رہے کہ ایران اور گروپ پانچ جمع ایک کو تیس جون تک کی مہلت ہے تاکہ وہ اسلامی جمہوریہ ایران کے ایٹمی معاملے کے تعلق سے کوئی حتمی سمجھوتہ کرسکیں- اور اس کے لئے دونوں فریق مذاکرات میں مشغول ہیں- 


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Sep 26