Tuesday - 2018 july 17
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 77662
Published : 29/6/2015 19:39

جبہۃ النصرہ سے اسرائیل کا رابطہ مشکوک ہے

فلسطینی انتظامیہ کے سربراہ نے دہشت گرد گروہ جبہۃ النصرہ کے ساتھ اسرائیلی رابطے کو مشکوک قرار دیا ہے-
سعودی عرب کے ٹی وی چینل الحدث کی رپورٹ کے مطابق فلسطینی انتظامیہ کے سربراہ محمود عباس ابومازن نے اتوار کے روز کہا کہ شام میں سرگرم دہشت گرد گروہ جبھۃ النصرہ اور صیہونی حکومت کے درمیان مشکوک روابط پائے جاتے ہیں- ابو مازن نے کہا جب یہ اعلان کیا جاتا ہے کہ دہشت گرد گروہ جبھۃ النصرہ کے زخمیوں کا علاج اسرائیل میں کیا جاتا ہے تو پھر جبھۃ النصرہ کے اسرائیل کے ساتھ روابط نہ ہونے کے دعوے کو کس طرح سے تسلیم کیا جائے؟ ابو مازن نے اسی طرح بیت المقدس میں عیسائیوں کے خلاف داعش کے دھمکی آمیز پمفلٹوں کی تقسیم کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ یہ پمفلٹ نہ ہی رام اللہ میں اور نہ ہی الخلیل میں، بلکہ ایسے علاقوں میں تقسیم کئے گئے ہیں، جو صیہونی حکومت کے کنٹرول سے خارج ہیں- فلسطینی انتظامیہ کے سربراہ نے کہا کہ داعش اور اس کے حامیوں کے اقدامات نہ صرف عیسائیوں کے لئے بلکہ مسلمانوں کے لئے بھی خطرہ ہیں- واضح رہے کہ داعش دہشت گرد گروہ نے بیت المقدس میں ایک بیان شائع کرتے ہوئے اس شہر کے عیسائیوں کو ماہ رمضان کے آخر تک مقبوضہ بیت المقدس چھوڑنے کو کہا ہے- داعش نے دھمکی دی ہے کہ جو عیسائی عید الفطر تک بیت المقدس چھوڑ کر نہیں جائیں گے ان کی گردنیں اڑا دی جائیں گی-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 july 17