Friday - 2018 Oct. 19
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 79668
Published : 29/7/2015 13:28

جواد ظریف اورفیڈریکا موگرینی کی مشترکہ پریس کانفرنس

اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ نے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ ایٹمی معاہدے سے ایران اور یورپی یونین کے تعلقات ایک نئے مرحلے میں داخل ہو جائیں گے۔ اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے منگل کے دن سہ پہر کے وقت یورپی یونین کی خارجہ پالیسی شعبے کی سربراہ فیڈریکا موگرینی سے ملاقات کے بعد تہران میں ایک مشترکہ پریس کانفرنس کی۔ اس پریس کانفرنس میں محمد جواد ظریف نے کہا کہ ایران اور یورپی یونین کے درمیان وسیع تعلقات قائم تھے اور اب ان کو توقع ہے کہ وہ بلاوجہ پیدا ہونے والے بحران کو عبور کرکے نئے مرحلے میں داخل ہو جائیں گے۔ محمد جواد ظریف کا مزید کہنا تھا کہ یورپی یونین کی خارجہ پالیسی شعبے کی سربراہ فیڈریکا موگرینی کے دورۂ ایران اور دو طرفہ ملاقات کے دوران مشترکہ جامع ایکشن پلان پر عملدرآمد اور ایران اور یورپی یونین کے باہمی تعلقات کے بارے میں اچھے مذاکرات ہوئے ہیں۔ اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ نے مزید کہا کہ ایران نے مشترکہ جامع ایکشن پلان میں جو وعدے کئے ہیں وہ اس کے قانونی تقاضے پورے ہونے کے بعد ان پر عملدرآمد کا پابند ہوگا۔ محمد جواد ظریف نے مزید کہا کہ ایرانی عوام کو بعض یورپی ممالک کی پالیسیوں اور رجحانات پر تشویش لاحق ہے اور اس بات کی ضرورت ہے کہ مشترکہ جامع ایکشن پلان پر عملدرآمد کرتے ہوئے یورپی ممالک خصوصا امریکا ایرانی عوام کی اس تشویش کو دور کرے۔ یورپی یونین کی خارجہ پالیسی شعبے کی سربراہ فیڈریکا موگرینی نے بھی اس بات پر تاکید کی کہ مشترکہ جامع ایکشن پلان پر عملدرآمد کے بعد ایران اور یورپی یونین کے تعلقات نئے مرحلے میں داخل ہو جائیں گے۔ فیڈریکا موگرینی کا مزید کہنا تھا کہ اب وقت آ گیا ہےکہ اس بات کو ثابت کیا جائے کہ فریقین نے جس معاہدے پر دستخط کئے ہیں اس پر عملدرآمد بھی کرسکتے ہیں اور یہ ایک تاریخی کام ہو سکتا ہے۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Friday - 2018 Oct. 19