Thursday - 2018 Oct. 18
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 79745
Published : 30/7/2015 12:5

حقیقت بیانی کے جرم میں برطانوی دباؤ اب بھی جاری

ایران کی غیر ملکی نشریات کے سربراہ نے کہا ہے کہ برطانوی حکام، ان واقعات کی خبروں میں رکاوٹ ڈالتے ہیں جو مغرب کے مفاد میں نہیں ہوتے- اسلامی جمہوریہ ایران کے ادارے آئی آر آئی بی کی ایکسٹرنل سروسز کے سربراہ محمد اخگری نے کہا ہے کہ برطانیہ، پریس ٹی وی پر ایسی خبروں اور رپورٹوں کو نشر کرنے کے باعث دباؤ جاری رکھے ہوئے ہے کہ جن پر مغربی ذرائع ابلاغ سکوت اختیار کئے رہتے ہیں- آئی آر آئی بی کی ایکسٹرنل سروسز کے سربراہ محمد اخگری نے جو شانگھائی تعاون تنظیم کے ذرائع ابلاغ کی یونین کے اجلاس میں شرکت کے لئے چین کے دورے پر ہیں، اجلاس کے موقع پر کہا کہ پریس ٹی وی ان خبروں اور رپورٹوں کو کوریج دیتا ہے کہ جن پر مغرب، خاموشی اختیار کئے رہتا ہے- انھوں کے کہا کہ اس کی جملہ مثالیں شام میں پریس ٹی وی کے دو رپورٹروں کا قتل اور پاکستان و افغانستان پر امریکی ڈرون حملوں میں عام شہریوں کی ہونے والی ہلاکت ہے- انھوں نے کہا اس طرح کے واقعات کو ایران کوریج دیتا ہے لیکن مغربی ذرائع ابلاغ ہرگز ان کا ذکر تک نہیں کرتے - محمد اخگری نے برطانیہ میں پریس ٹی کے جواز کی منسوخی اور اس کی نشریات روکنے کے لئے سیٹ لائٹ سے اس کا نام حذف کئے جانے اور سوشل میڈیا میں اس کا اکاؤنٹ منجمد کئے جانے کی طرف بھی اشارہ کیا- آئی آر آئی بی کی ایکسٹرنل سروسز کے سربراہ محمد اخگری نے کہا کہ ہمارا نعرہ ان افراد کی آواز کو پہنچانا ہے جو اپنا پیغام پہنچانے کی طاقت نہیں رکھتے اور یہی وجہ ہے کہ ہمارے لئے مسائل کھڑے کئے جاتے ہیں- انھوں نے کہا کہ "آفکام" نے جو مواصلاتی سرگرمیوں پر نگرانی کا برطانوی ادارہ ہے، پریس ٹی وی کا لائسنس ختم کر کے اس کی نشریات روک دیں جس کے بعد امریکہ اور یورپ کے کچھ سیٹ لائٹس نے بھی پریس ٹی وی کی نشریات دکھانا بند کر دیں-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Thursday - 2018 Oct. 18