Monday - 2018 Dec 10
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 81870
Published : 1/9/2015 14:9

آل سعود کے مخالف سعودی مذہبی رہنما کی سزائے قید میں اضافہ

سعودی حکام نے آل سعود مخالف مذہبی رہنما کی سزائے قید کی مدت بڑھا دی ہے- نباء ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب میں انسانی حقوق کے یورپی ادارے کے سربراہ علی الدبیسی نے کہا ہے کہ پیر کے روز سعودی عرب کی ایک عدالت کے خفیہ اجلاس میں آل سعود کے مخالف مذہبی رہنما شیخ حسن آل زائد کی قید کی سزا آٹھ سال سے بڑھا کر دس سال کر دی گئی ہے- شیخ حسن آل زائد کہ جو القطیف کے ایک اسکول میں استاد تھے، اٹھارہ مئی دو ہزار تیرہ میں القطیف میں عوامی تحریک شروع ہونے کے بعد اس علاقے کے اپنے سیکڑوں حامیوں کے ہمراہ گرفتار کر لئے گئے تھے- القطیف کے علاقے میں گذشتہ ہفتے بھی گرفتاریوں کا سلسلہ جاری رہا- اس علاقے کے صرف القدیح علاقے سے سترہ افراد کو گرفتار کیا گیا ہے- القطیف کی سرگرم سیاسی شخصیات نے حراست میں لئے جانے والوں سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے "القطیف میں گرفتاریوں کی لہر" کے عنوان سے کیمپین شروع کر رکھی ہے- سرگرم شخصیات کا کہنا ہے کہ گرفتار ہونے والے بعض افراد کا تعلق مسجد امام علی (ع) میں شہید ہونے والوں کے اہل خاندان اور رشتہ داروں سے ہے- مئی کے مہینے میں القدیح کی امام علی مسجد میں ہونے والے دھماکے میں بائیس نمازی شہید اور دسیوں زخمی ہو گئے تھے- سعودی حکومت اس سے پہلے بھی دو ہزار گیارہ سے شروع ہونے والے عوامی مظاہروں کو کچلنے کی کوشش کرتی رہی ہے- سعودی حکومت، اس ملک کے معروف مذہبی رہنما آیت اللہ شیخ نمر باقر النمر کو سزائے موت کا حکم دے چکی ہے- آل سعود ، شیخ نمر کی سزائے موت کے فیصلے پر عمل درآمد کے خطرناک نتائج کے خوف سے اسے ملتوی کئے ہوئے ہے-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 Dec 10