Monday - 2018 Dec 10
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 81878
Published : 1/9/2015 14:25

ایران کے ساتھ سمجھوتہ دونوں فریق کے حق میں ہے: میڈلین آلبرائٹ

امریکہ کی سابق وزیر خارجہ نے کہا ہےکہ ایران کے ساتھ ہونے والا سمجھوتہ، دونوں فریق کے حق میں اور سفارتکاری کا بے مثال نمونہ ہے- آلبرائٹ نے سی این این کی نیوز ویب سائٹ میں ایک مضمون میں لکھا ہے کہ بیل کلنٹن کے دور حکومت میں جب میں وزیر خارجہ تھی تو میں نے مذاکرات شروع کرنے کی تجویز پیش کی تھی ۔انہوں نے دعوی کیا کہ ایرانی حکام مذاکرات کے لئے تیار نہیں تھے اور دونوں ملکوں کے درمیان بے اعتمادی کی حائل ضخیم دیوار کو توڑا نہیں جاسکا-
 انہوں نے ایران اور گروپ پانچ جمع ایک کے حالیہ سمجھوتے کو کانگریس کی جانب سے مسترد کئے جانے کے بارے میں خبردار کرتے ہوئے کہا کہ کانگریس میں اس سمجھوتے کی مخالفت کرنے والے اس کا کوئی متبادل منصوبہ پیش نہیں کر سکے ہیں-
میڈلین البرائٹ نے اپنے مضمون میں لکھا ہے کہ اس سمجھوتے کو مسترد کرنے سے امریکہ گوشہ نشیں ہوجائے گا جو امریکہ کے لئے اسٹریٹجک شکست کے مترادف ہوگا ، ایسی شکست کہ جس سے ہمارے دشمن اور حریف چشم پوشی نہیں کریں گے- انہوں نے مزید کہا کہ یہ سمجھوتہ جدت عمل اور شاندار سفارتکاری کا ایک نمونہ ہے اور ایک ایسا موقع ہے جسے ہاتھ سے گنوانا نہیں چاہئے-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 Dec 10