Saturday - 2018 August 18
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 83361
Published : 14/9/2015 9:7

عراق کی تقسیم کے بارے میں امریکی حکام کے موقف پر تنقید

عراق کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے عراق کے مستقبل کے بارے میں امریکہ کی دفاعی انٹیلیجنس ایجنسی کے سربراہ کے موقف کی مذمت کی ہے- عراقی وزارت خارجہ کے ترجمان احمد جمال نے فارس نیوز ایجنسی کو انٹرویو دیتے ہوئے امریکہ کی دفاعی انٹیلیجنس ایجنسی کے سربراہ ونسنٹ اسٹوارٹ کی جانب سے عراق اور شام کے مستقبل کے بارے میں خبردار کئے جانے کے سلسلے میں کہا کہ مذہبی اور نسلی جھڑپوں کی وجہ سے عراق کی تقسیم کے بارے میں امریکی حکام کے بیانات ناقابل قبول ہیں کیونکہ عراق کے تمام نسلی و مذہبی گروہ اور قبائل داعش کے دہشت گردانہ حملوں کے مقابلے میں متحد اور داعش کے خلاف بر سرپیکار ہیں- عراقی وزارت خارجہ کے ترجمان نے مزید کہا کہ امریکی حکام کے یہ بیانات ، عراقی حکومت کے لئے جو پوری دنیا کی طرف سے داعش دہشت گرد گروہ کے خلاف لڑ رہی ہے، مثبت پیغام کے حامل نہیں ہیں- عراق کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے تاکید کے ساتھ کہا کہ اس وقت عراق میں لڑنے والے داعش گروہ میں دنیا کے اسی ممالک کے دہشت گرد موجود ہیں اور بہتر ہے کہ مغرب خاص طور پر امریکہ، عراقیوں کے اتحاد میں شکوک و شبہات پیدا کرنے کی کوشش کے بجائے یورپی شہریت کے حامل دہشت گردوں کو عراق میں داخل ہونے سے روکے- امریکہ کی دفاعی انٹیلیجنس ایجنسی کے سربراہ ونسنٹ اسٹوارٹ سمیت مختلف امریکی حکام نے دعوی کیا ہے کہ نسلی اور مذہبی جھڑپوں کے باعث آئندہ برسوں میں عراق اور شام کے تقسیم ہو جانے کا امکان ہے-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Saturday - 2018 August 18