Friday - 2018 August 17
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 83513
Published : 16/9/2015 13:11

ایٹمی معاہدے کو مسترد کرنے کے لئے سینٹ میں ریپلکنز کی ناکام کوشش

امریکہ کے ڈیموکریٹ سینیٹروں نے ایران کے ساتھ ہونے والے ایٹمی اتفاق رائے کو مسترد کئے جانے کے بارے میں رائے شماری کو ایک بار پھر رکوادیا- منگل کے روز ہونے والے اجلاس میں ایران کے ساتھ ایٹمی معاہدے کے مخالفین، ایک بار پھر بحث کے خاتمے اور رائے شماری کرانے کے لئے، لازمی ساٹھ ارکان کی حمایت حاصل کرنے میں ناکام رہے۔ 
بیالیس ڈیموکریٹ سینیٹروں نے ایران کے ساتھ ہونے والے ایٹمی اتفاق رائے کی حمایت کی جبکہ ری پبلکن سے تعلق رکھنے والے چھّپن سینٹرز اس اتفاق رائے کی مخالفت کر رہے تھے۔ ری پبلکن کے دو دیگر سینیٹروں نے کسی رائے کا اظہار نہیں کیا اور یوں سینٹ میں ایران کے ساتھ ایٹمی سمجھوتے کو مسترد کئے جانے کے بارے میں رائے شماری کرائے جانے کے لئے ری پبلکن ارکان کی کوشش ایک بار پھر ناکام ہوگئی۔
دوسری بار ناکامی کے باجود سینیٹ میں اکثریتی دھڑے کے لیڈر اور ایران کے ساتھ ایٹمی معاہدے کے خلاف تحریک کے بانی سینٹر میچل مک کینل نے کہا ہے کہ وہ جمعرات کو تیسری بار اس حوالے سے رائے شماری کرانے کی کوشش کریں گے۔
دوسری جانب ڈیموکریٹ سینیٹر ڈیک ڈربن نے تیسری بار رائے شماری کرائے جانے کو لاحاصل قرا دیتے ہوئے کہا کہ پچھلے ہفتے بھی ہم نے ایران کے ساتھ ہونے والے ایٹمی اتفاق رائے کے بارے میں بحث کے خاتمے اور رائے شماری کرانے کے لئے ارکان کی رائے معلوم کی تھی اور اب وہ سمجھتے ہیں کہ اس کی ضرورت نہیں ہے ۔
 سینیٹ میں اقلیتی دھڑے کے رہنما سینیٹر ہیری ریڈ نے رائے شماری سے پہلے کہا تھا کہ اگر کوئی یہ سمجھتا ہے کہ ارکان(سینیٹ) اپنی رائے بدل دیں گے تو وہ بقول ان کے "احمقوں کی جنت میں رہتا ہے۔"
قابل ذکر ہے کہ ایران اور چھے بڑی طاقتوں کے گروپ، پانچ جمع ایک نے مہینوں کے مذاکرات کے بعد رواں سال جون کے مہینے میں ایٹمی اتفاق رائے پر دستخط کئے تھے جس کے تحت عالمی برادری نے ایران کے پرامن ایٹمی پروگرام کو تسلیم اور اس کے خلاف عائد تمام پابندیاں اٹھانے کا اعلان کیا تھا۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Friday - 2018 August 17