Saturday - 2018 August 18
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 83584
Published : 17/9/2015 7:52

سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کے کمانڈروں سے رہبر انقلاب اسلامی کا خطاب

رہبر انقلاب اسلامی نے اسلامی جمہوریہ ایران کے پالیسی سازی اور فیصلہ سازی کے مراکز میں دشمن کے پٹھووں کے اثر و رسوخ کے بارے میں خبردار کیا ہے۔ فارس خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کے کمانڈروں اور اہلکاروں نے بدھ کے دن رہبر انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای سے ملاقات کی۔ رہبر انقلاب اسلامی نے اس موقع پر اپنے خطاب میں فرمایا کہ آج دشمن کی اثر و رسوخ حاصل کرنے کی کوششیں  اسلامی ایران کے لئے ایک بڑا خطرہ ہیں۔

رہبر انقلاب اسلامی نے فرمایا کہ نظریاتی، ثقافتی اور سیاسی شعبوں میں اثر و رسوخ کے مقابلے میں اقتصاد اور سیکورٹی سے متعلق شعبوں میں اثر و رسوخ کو کم اہمیت حاصل ہے۔ البتہ سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کے کمانڈروں سمیت مختلف ایرانی حکام نے سیکورٹی اثر و رسوخ کا راستہ روک دیا ہے اور اقتصادی حکام کو بھی اقتصادی اثر و رسوخ کے بارے میں خبردار اور ہوشیار رہنا چاہئے۔

آپ نے فرمایا کہ دشمن ثقافتی اثر و رسوخ حاصل کرنے کے لئے، معاشرے کا تحفظ کرنے اور انہیں پائیدار رکھنے والے عقائد کو کمزور اور ان میں خلل ڈالنے کے درپے ہے۔ وہ سیاسی اثر و رسوخ کے حصول کے لئے پالیسی سازی کے مراکز میں اثر و رسوخ حاصل کرنے کے لئے کوشاں ہے اور ان مراکز میں اثر و رسوخ حاصل نہ ہونے کی صورت میں وہ فیصلہ سازی کے مراکز میں اثر و رسوخ پیدا کرنے کی کوشش کرے گا۔

آیت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای نے فرمایا کہ اگر ہم بیدار رہیں تو دشمن کی امیدیں مایوسی میں بدل جائیں گی۔ ہمیں انقلاب کے اصولوں اور انقلابی فکر کو انتہائی مستحکم کرنا چاہئے اور یہ سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کے دانشور کمانڈروں اور ایران کے تمام انقلابی دانشوروں کا بنیادی فریضہ ہے۔ 

رہبر انقلاب اسلامی نے اس بات پر بھی تاکید کی کہ جب کسی ملک میں سامراجیوں کو سیاسی اثر رسوخ حاصل ہو جاتا ہے تو اس ملک کی پالیسیاں ان کے فیصلوں کے مطابق بنتی ہے اور وہ ملک سامراجیوں کے فیصلوں کے مطابق ہی عمل کرتا ہے۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Saturday - 2018 August 18