Saturday - 2018 June 23
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 83941
Published : 23/9/2015 9:32

ہفتہ دفاع مقدس کی تقریب سے صدر مملکت کا خطاب

اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر ڈاکٹر حسن روحانی نے ملت ایران کے آٹھ سالہ دفاع مقدس کو تاریخ ساز اور سب کے لیے سبق آموز قرار دیا ہے۔
صدر مملکت نے منگل کے روز ہفتہ دفاع مقدس کے آغاز کے موقع پر بانی انقلاب اسلامی حضرت امام خمینی رحمت اللہ علیہ کے مزار پر ہونے والی مرکزی تقریب اور فوجی پریڈ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہفتہ دفاع مقدس ملت ایران کے لیے باعث افتخار ہے اور یہ اغیار کی جارحیت اور ملت ایران کے دفاع کی یاد دلاتا ہے-
صدر مملکت نے کہا کہ اغیار یہ خیال کر رہے تھے کہ انقلاب کے آغاز اور ان کے نقطہ نظر سے ایران کی حکومت اور مسلح افواج کی کمزوری کے حالات میں اپنے برسوں پرانے خواب کو حقیقت کا روپ دے سکتے ہیں لیکن ملت ایران اسلامی انقلاب کے سائے میں ہر دور سے زیادہ زندہ اور آمادہ قوم بن چکی تھی اور جنگ اور جارحیت کا مقابلہ کر کے زندہ تر ہو گئی-
اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر نے کہا کہ اگرچہ مسلط کردہ جنگ نے ایران کو نقصان پہنچایا اور اس کے لیے مشکلات پیدا کیں لیکن ملت کے دفاع نے گرانبہا اثرات بھی چھوڑے ہیں۔ 
انھوں نے کہا کہ ملت ایران دفاع مقدس کے نتیجے میں، اغیار اور جارحین کے مقابلے میں ایک متحد، مضبوط اور قوی قوم میں تبدیل ہو گ‏ئی-
صدر مملکت نے اس بات پر زور دیا کہ مسلط کردہ جنگ سے یہ ثابت ہو گیا کہ کون حملہ آور ہیں، دوسروں کے داخلی امور میں مداخلت اور جارحیت کے پس پردہ کون سی سوچ کار فرما ہے اور کون ہیں جو نہ صرف ہمسایہ قوموں پر بلکہ اپنی قوم پر بھی رحم نہیں کرتے ہیں-
انھوں نے مزید کہا کہ ایران کے اسلامی انقلاب کا پیغام تمام ہمسایہ قوموں کے لیے استقلال و خودمختاری کا پیغام تھا لیکن بڑی طاقتوں نے اپنے زرخریدوں کو جارحیت پر تیار کیا اور وہ یہ خیال کر رہی تھیں کہ ایک عظیم قوم کی قدرت و طاقت کو شکست دے سکتی ہیں-
قابل ذکر ہے کہ بائیس ستمبر ایران میں ہفتہ دفاع مقدس کا پہلا دن ہے، بائیس ستمبر انیس سو اسی کو اس وقت کی عراقی حکومت نے امریکہ اور مغربی طاقتوں کے اکسانے پر ایران کے خلاف جارحیت کا آغاز کیا تھا جس کا مقصد ایران کے نوخیز انقلاب اور اسلامی جمہوری نظام کو ختم کرنا تھا۔ 


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Saturday - 2018 June 23