Thursday - 2018 Nov 22
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 86171
Published : 28/10/2015 18:48

پاکستان میں زلزلے میں مرنے والوں کی تعداد میں اضافے کا امکان، پشاور میں آفٹرشاکس کا سلسلہ جاری

پاکستان میں آنے والے زلزلے میں مرنے والوں کی تعداد میں اضافے کا امکان بڑھتا جا رہا ہے جبکہ پشاور میں آفٹرشاکس کا سلسلہ جاری رہنے کی اطلاعات ہیں۔

پاکستان کے وفاقی اور صوبائی حکام نے یہ خدشہ ظاہرکیا ہے کہ شانگلہ، چترال اور باجوڑ تک رسائی آسان نہ ہونے کے باعث زلزلے کی وجہ سےمرنے والوں کی تعداد میں اضافہ ہو سکتا ہے–

پاکستانی مواصلاتی نظام کو ہونے والے شدید نقصان کی وجہ سے متعلقہ ضلع یا ایجنسی کی انتظامیہ کو اندازہ نہیں ہے کہ زلزلے کے نتیجے میں ان علاقوں کی آبادی کا کتنا نقصان ہوا ہے۔ صورتحال کی ذاتی طور پر نگرانی کرنے والے وزیراعظم آفس کے ایک اہم ذریعے نے بتایا کہ جانی نقصان کے حوالے سے درست جائزہ مکمل ہونے میں وقت لگے گا۔

شام سات بجے تک ملک کے مختلف حصوں میں زلزلے کی وجہ سے 283 افراد کی ہلاکت کی تصدیق ہو چکی تھی۔ اسلام آباد اور پشاور میں حکام یہ جاننے کی کوشش کر رہے ہیں کہ شانگلہ، چترال اور باجوڑ میں زمینی صورتحال کیا ہے۔ کہا جاتا ہے کہ زلزلے کے باعث مٹی کے تودے گرنے کی وجہ سے گلگت بلتستان میں زیادہ نقصان ہوا ہے تاہم اس کی وجہ سے زیادہ جانی نقصان نہیں ہوا۔
درایں اثنا پیشاور میں قیامت خیز زلزلے کے بعد آفٹرشاکس کاسلسلہ اب تک جاری ہے جس کے باعث لوگوں میں شدید خوف و ہراس پھیلا ہوا ہے۔ زلزلے سے مخدوش مکان کی چھت گرنے سے دو بچوں سمیت تین افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

پیر سے لے کر اب تک پشاور میں بتیس سے زیادہ آفٹر شاکس آچکے ہیں آفٹر شاکس کا یہ سلسلہ صبح تک جاری رہا۔ صبح تقریبا چھ بج کر بتیس منٹ پر دوبارہ ہونے والے آفٹر شاکس کی شدت چار اعشاریہ تین اور اس کی گہرائی ایک سو بارہ کلو میٹر تھی۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Thursday - 2018 Nov 22