Tuesday - 2018 June 19
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 86916
Published : 9/11/2015 13:52

امریکہ روس کے ساتھ دشمنی کا خواہاں نہیں ہے: امریکی وزیر جنگ ایشٹن کارٹر

امریکی وزیر جنگ نے کہا ہے کہ امریکا روس کے ساتھ دشمنی کا خواہاں نہیں ہے لیکن روس کے مقابل اپنے مفادات کا دفاع کرے گا۔
اطلاعات کے مطابق امریکی وزیر جنگ ایشٹن کارٹر نے ہفتے کی رات ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے دعوی کیا کہ امریکا روس کے ساتھ دشمنی کا خواہاں نہیں ہے لیکن روس کے مقابل وہ اپنے مفادات کا دفاع کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ واشنگٹن اور ماسکو جہاں بھی ان کے مفادات کا تقاضا ہو گا ایک دوسرے کے ساتھ تعاون کریں گے جیسا کہ ایران کے ساتھ ایٹمی معاہدے کے سلسلے میں ہوا۔ 
امریکی وزیر جنگ نے اسی کے ساتھ کہا کہ امریکا روس کے خلاف جنگ تو کیا سرد جنگ کا بھی خواہاں نہیں ہے- ان کا کہنا تھا کہ ہم نہیں چاہتے کہ روس ہمارا دشمن ہو۔ انہوں نے کہا کہ امریکا اپنے اور اپنے اتحادیوں کے مفادات اور بین الاقوامی نظام کا دفاع کرے گا۔ 
قابل ذکر ہے کہ واشنگٹن نے بنیادی طور پر ماسکو کے خلاف دشمنانہ موقف اختیار کر رکھا ہے اور آشکارا طور پر اپنے اور اپنے یورپی اتحادیوں کے خلاف روسی خطرے کی بات کرتا رہتا ہے۔ شام میں روس کی فوجی کارروائی کی وجہ سے بھی امریکا اور روس کے درمیان کشیدگی اور اختلافات میں اضافہ ہوا ہے۔ علاوہ ازیں امریکا کے دشمنانہ اقدامات اور علاقائی اور عالمی سطح پر روس کی شبیہ بگاڑنے کے مقصد سے امریکا کی طرف سے شروع کی جانے والی وسیع تشہیراتی جنگ بھی دونوں ملکوں کے درمیان کشیدگی کا باعث بنی ہے۔ 
ادھر امریکی فوجی سربراہ جنرل مارک میلی نے حال ہی میں روس کو امریکا کے مقابلے میں جارح قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ روس ایٹمی ہتھیاروں اور ان ہتھیاروں کے استعمال کی صلاحیت کا حامل ہونے کی وجہ سے امریکا کے لئے سب سے بڑا خطرہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ روس دنیا کا واحد ملک ہے جس کے پاس امریکا کو تباہ کرنے کی ایٹمی صلاحیت پائی جاتی ہے، اسی لئے ماسکو واشنگٹن کے لئے حقیقی خطرہ شمار ہوتا ہے۔ 
درحقیقت روس کے سلسلے میں امریکا کا اصل موقف کیا ہے اس کو جنرل مارک میلی کی باتوں سے بخوبی سمجھا جا سکتا ہے۔ لہذا امریکی وزیر جنگ ایشٹن کارٹر کے مذکورہ بیانات اور ان کے اس دعوے کو کہ امریکا تو روس کے خلاف سرد جنگ کا بھی خواہاں نہیں ہے صرف ایک تشہیراتی بیان اور امریکا کو امن پسند ظاہر کرنے کا ایک حربہ ہی قرار دیا جا سکتا ہے۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 June 19