Wed - 2018 August 15
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 87033
Published : 10/11/2015 19:23

سعودی عرب میں ایک سو چالیس سے زیادہ افراد کو سزائے موت

سعودی عرب میں رواں سال میں ایک سو چالیس سے زیادہ افراد کو پھانسی دی جا چکی ہے-

فرانس پریس کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کی وزارت داخلہ نے پیر کو ایک بیان میں ایک سعودی شہری کو سزائے موت دیئے جانے کی خبر دی ہے- اس سعودی شہری پر ایک پولیس اہلکار کو قتل کرنے کا الزام تھا-

سعودی عرب ، رواں سال میں اب تک ایک سو چھیالیس افراد کو سزائے موت دے چکا ہے- سعودی عرب کی وزارت داخلہ نے اعلان کیا ہے کہ عاید الجھاد علی کو ایک پولیس اہلکار کو گولی مار کر قتل کرنے کی بنا پر موت کی سزا دی گئی ہے - یہ پولیس اہلکار جہاد علی کو منشیات کی اسمگلینگ کے جرم میں گرفتار کرنے کی کوشش کر رہا تھا-

سعودی عرب میں موت کی سزا پانے والوں کا عام طور سے تلوار سے سر قلم کر دیا جاتا ہے- فرانس پریس کے اعداد و شمار کے مطابق اس سعودی شہری کی پھانسی کے بعد رواں سال میں اس ملک میں موت کی سزا پانے والوں کی تعداد ایک سو چھیالیس ہو گئی ہے جبکہ دوہزار چودہ میں اس ملک میں ستاسی افراد کو سزائے موت دی گئی تھی-

انسانی حقوق کے ماہرین نے، سعودی عرب میں مقدمات کی کارروائیوں کے منصفانہ ہونے کے سلسلے میں تشویش ظاہر کی ہے- سعودی عرب نے اسلامی جمہوریہ ایران سے ہماہنگی کے بغیر اتوار کو بھی تین ایرانی شہریوں کو منشیات کی اسمگلینگ کے الزام میں پھانسی دے دی تھی- ایران کی وزارت خارجہ نے اتوار کو تہران میں سعودی عرب کے ناظم الامور کو طلب کر کے ریاض کے اس اقدام پر شدید احتجاج کیا ہے-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 August 15