Wed - 2018 Sep 19
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 87038
Published : 10/11/2015 19:40

مشہد میں علامہ اقبال کی یاد میں سیمینار

علامہ اقبال نے اسلامی تشخص کے احیا اور اتحاد امت کے لیے گرانقدر خدمات انجام دی ہیں۔ ان خیالات کا اظہار مختلف مقررین نے مشہد مقدس میں علامہ اقبال کی یاد میں منعقدہ ایک سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ مشہد کے علامہ اقبال انسٹی ٹیوٹ آف ہائر ایجوکیشن کے زیر اہتمام منعقدہ سیمینار میں صوبہ خراسان رضوی کے ڈپٹی گورنر اور پاکستان کے قونصل جنرل کے علاوہ صوبے کی اعلی علمی اور ثقافتی شخصیات نے شرکت کی اور علامہ اقبال کے بارے میں اپنے خیالات کا اظہار کیا۔ صوبہ خراسان رضوی کے ڈپٹی گورنر ارکانی نے کہا کہ علامہ اقبال نے اسلامی تشخص کے احیا اور اتحاد امت میں اہم کردار ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ علامہ اقبال کے منظوم اور منثور مجموعے دونوں میں آ ج بھی تازگی پائی جاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ علامہ اقبال کے اشعار میں انسانیت کا درد پوری طرح سے محسوس کیا جاسکتا ہے کیونکہ انہوں نے یہ اشعار معاشرے کے گہرے ادراک کے ساتھ کہے ہیں۔صوبہ خراسان رضوی کے ڈپٹی گورنر نے کہا کہ علامہ اقبال اس وقت ایک ستارے کے مانند چمکے جب خطے کی اقوام اور مسلمان سامراج کے تسلط اور جہالت کے اندھیرے میں زندگی گزار رہے تھے۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے پاکستان کے قونصل جنرل یاور عباس نے کہا کہ علامہ اقبال کو ایران سے گہرا لگاؤ تھا اور انہوں نے اپنے اشعار اور نثر دونوں میں اس کا کھل اظہار کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ علامہ اقبال نے تہران کو عالم مشرق کا جینوا قرار دیا تھا اور اپنے شعری مجموعے زبور عجم کی ایک نظم میں انقلاب ایران کی پیشین گوئی بھی کی تھی۔یاور عباس نے کہا کہ علامہ اقبال کی فکر کسی خاص خطے تک محدود نہیں بلکہ آفاقی ہے اور ان کا پیغام پوری مسلم امہ کے لیے ہے۔ مشہد کے علامہ اقبال انسٹی ٹیوٹ آف ہائر ایجوکیشن میں منعقدہ سیمینار سے دیگر علمی شخصیات نے بھی خطاب کیا اور علامہ اقبال کے پیغام پر عمل کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Sep 19