شنبه - 2019 مارس 23
ہندستان میں نمائندہ ولی فقیہ کا دفتر
Languages
Delicious facebook RSS ارسال به دوستان نسخه چاپی  ذخیره خروجی XML خروجی متنی خروجی PDF
کد خبر : 87362
تاریخ انتشار : 15/11/2015 18:4
تعداد بازدید : 4

دہشت گردی کے ناگوار اثرات کی بابت ایران کا انتبا

ایران کے نائب وزیر خارجہ حسن امیر عبداللھیان نے کہا ہے کہ دہشت گردی کے نتیجے میں پوری دنیا کو ناگوار حالات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔
ویانا میں اپنے روسی ہم منصب میخائل بوگدانوف اور شام میں کے امور میں اقوام متحدہ کے خصوصی نمائندے اسٹیفن ڈی مستورا کے ساتھ سہ فریقی اجلاس سے قبل صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے ایران کے نائب وزیر خارجہ نے کہا کہ دہشت گردی کی تقویت کسی کے بھی مفاد میں نہیں ہے۔ انہوں نے پیریس میں رونما ہونے والے دہشت گردانہ واقعات کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ اس اقدام سے ثابت ہوگیا ہے کہ دوہرے معیاروں اور دہشت گردی کی اچھی اور بری دہشت گردی میں تقسیم کے پورے خطے کے لیے ناگوار نتائج برآمد ہونگے۔ انہوں نے یہ بات زور دیکر کہی کہ ویانا -2 اجلاس میں دہشت گردی کے خلاف ٹھوس اقدامات پر توجہ اور دہشت گردوں کو سخت پیغام جانا چاہیے۔ انہوں نے ایک بار پھر کہا کہ ویانا اجلاس میں شریک وفود شام کے سیاسی مستقبل کے بارے میں کوئی فیصلہ نہیں گے کیونکہ ایسا کرنا صرف شامی عوام کا حق ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس اجلاس کو ایسا ماحول تیار کرنے کوشش کرنا چاہیے جس کے نتیجے میں شامی عوام اپنے ملک کے سیاسی مستقبل کا فیصلہ خودکرسکیں اور دہشت گردی کے خلاف جنگ میں انہیں کامیابی نصیب ہو۔
قابل ذکر ہے کہ ایران کے نائب وزیر خارجہ حسین امیر عبداللھیان شام کے بارے میں ہونے والے اجلاس میں شرکت کی غرض سے جمعے کو ویانا پہنچے تھے۔ ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف بھی ہفتے کو ویانا پہنچ گئے ہیں۔


نظر شما



نمایش غیر عمومی
تصویر امنیتی :