Monday - 2018 Sep 24
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 87640
Published : 18/11/2015 19:35

داعش دہشت گردوں کا مقصد اسلامو فوبیا کی لہر پیدا کرنا ہے: صدر مملکت

اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر ڈاکٹر حسن روحانی نے کہا ہے کہ داعش دہشت گرد دنیا میں اسلامو فوبیا کی لہر پیدا کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ وہ خود کو اسلام کی طرف منسوب کرتے ہیں لیکن دین اسلام دہشت گردانہ اقدامات کا مخالف ہے۔ ہمارے نمائندے کی رپورٹ کے مطابق صدر مملکت ڈاکٹر حسن روحانی نے منگل کی شام کو ثقافتی انقلاب کی اعلی کونسل کے اجلاس میں کہا کہ اسلام، امن و رحمت کا دین ہے اور اس بات کی اجازت نہیں دینی چاہیے کہ یہ اقدامات خاص طور پر یورپ اور امریکہ میں کہ جہاں مسلمانوں کی ایک بڑی تعداد رہتی ہے، اسلامو فوبیا میں اضافے کا باعث بنیں۔ 
صدر مملکت نے کہا کہ افسوس بچے، عورتیں اور عام بے گناہ افراد دہشت گردانہ اقدامات کا شکار ہوئے ہیں اور ان جرائم کا مقابلہ کرنے کے لیے عالمی عزم و اتحاد کی ضرورت ہے۔ ڈاکٹر حسن روحانی نے اس بات کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہ اسلامی جمہوریہ ایران برسوں سے عالمی سطح پر دہشت گردی کی لعنت کا بھرپور مقابلہ کرنے کی ضرورت پر زور دے رہا ہے، کہا کہ ایران ایک ایسے ملک کی حیثیت سے کہ جو خود دہشت گردی کا شکار ہوا ہے، دہشت گردانہ سرگرمیوں اور بے گناہ انسانوں کے قتل عام کی مذمت کرتا ہے اور وہ اس قسم کے دہشت گردانہ اقدامات کا سنجیدگی سے اور ٹھوس طریقے سے مقابلہ کرے گا۔ 
صدر مملکت نے دہشت گردوں کا سنجیدگی سے مقابلہ کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اس بات کا جائزہ لینا چاہیے کہ داعش اپنے دہشت گردانہ اقدامات کو جاری رکھنے کے لیے اپنی مالی اور فوجی ضروریات کن ذرائع سے پوری کرتا ہے۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 Sep 24