Wed - 2018 Dec 12
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 185476
Published : 4/2/2017 18:11

واشنگٹن عدالت نے سنایا ٹرمپ کے خلاف فیصلہ

امریکہ کی ایک عدالت نے اس ملک کے صدر ٹرمپ کے حکمنامے کو معطل کرنے کا فیصلہ سنایا ہے۔


ولایت پورٹل:امریکی ریاست واشنگٹن کی وفاقی عدالت نے ٹرمپ انتظامیہ کے خلاف فیصلہ سناتے ہوئے حکم دیا ہے کہ سات مسلم ملکوں کے شہریوں کا امریکہ میں داخلہ روکنے کا حکم نامہ معطل رکھا جائے،حکم نامہ کا اطلاق امریکا بھر میں ہو گا۔ امریکی محکمہ انصاف نے ایگزیکٹو آرڈر کی معطلی کے خلاف اپیل کی تھی۔ جج کا کہنا ہے کہ نئی امیگریشن پالیسی سے، سب سے زیادہ نقصان امریکی شہریوں کو ہوا۔ ریاست واشنگٹن کے شہر سیاٹل کی وفاقی عدالت نے ٹرمپ کی امیگریشن پالیسی کو عارضی طور پر معطل کیے جانے کا فیصلہ برقرار رکھا ہے،عدالت نے اپنے مختصر فیصلے میں کہا کہ صدر ٹرمپ کے فیصلے سے ریاست واشنگٹن کی معیشت اور شہریوں کو ناقابل تلافی نقصان پہنچا ہے لہذا اس کے خلاف حکم امتناع جاری کیا جانا ضروری ہے۔ واشنگٹن کے اٹارنی جنرل باب فرگوسن نے ایگزیکٹو آرڈر کو معطل رکھنے کی درخواستیں دائر کر رکھی تھیں۔ باب فرگوسن کا موقف تھا کہ صدر ٹرمپ کے ایگزیکٹو آرڈر سے آئین میں دی گئی مذہبی آزادی اور یکساں تحفظ کی یقین دہانی کی خلاف ورزی ہوئی ہے،واضح رہے کہ امریکی صدر ٹرمپ نے ستّائس جنوری کو ایک آرڈینینس پر دستخط کر کے سات اسلامی ملکوں منجملہ ایران، عراق، شام، یمن، سوڈان، لیبیا اور صومالیہ کے شہریوں پر امریکہ میں داخلے پر تین ماہ کے لئے پابندی لگائی ہے۔
سحر


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Dec 12